فیصل آباد میں حسد اور ٹک ٹاک پر زیادہ شہرت ملنے پر بڑے بھائی نے چھوٹے بھائی کا گلاکاٹ کر اس بے گناہ کی زندگی کا چراغ گل کردیا اور گھر بتایا کہ واردات کے دوران ڈاکؤؤں نے اس کے بھائی کو موت کے گھاٹ اتار دیا جبکہ باپ اس ساری واردات سے بالکل لا علم تھا اور جب اسے حقیقت معلوم ہوئی تو اس کے دکھ میں مزید اضافہ ہو گیا کہ سگے بڑے بھائی نے اپنے چھوٹے بھائی کیساتھ یہ کیسے کیا اور کیوں کیا ۔ ملت ٹاؤن کے رہائشی 19 سالہ نوجوان نایاب کو 11 نومبر کو تیز دھار آلہ سے قتل کردیا گیا تھا جس کا مقدمہ پولیس نے نامعلوم افراد کے خلاف درج کیا تھا۔ تاہم پولیس نے دوران تفتیش اس معمے کو حل کرلیا اور پولیس تفتیش میں مقتول کا بڑا بھائی تیمور ہی اس کا قاتل نکلا۔
https://twitter.com/ARYNEWSOFFICIAL/status/1597569147503788035

 

ملزم نے اپنے اعترافی بیان میں بتایا کہ والدین مقتول نایاب کو زیادہ پیار کرتے اور اس کی خواہشات پوری کرتے تھے جبکہ مقتول ٹک ٹاک پر بھی اس سے زیادہ مشہور تھا جس کی حسد میں اس نے یہ قتل کیا۔ پولیس نے جب تیمور سے سوالات پوچھے تو ان کے جوابات پریشان کن تھے جس پر اس کو والد کے ساتھ تھانے لے جاکر تفتیش کی گئی تو اس نے اعتراف کرلیا کہ اس نے ہی اپنے بھائی کی جان لی ہے کیونکہ لوگ اس کے چھوٹے بھائی کو تحفے دینے لگے تھے اور والدین کی بھی وہ آنکھوں کا تارا بنتا جارہا تھا -تاہم والد نے تیمور کو معاف کردی ااس کا کہنا تھا کہ میرا ایک بیٹاتو دنیا سے چلا گیا میں دوسرے کو پھانسی نہیں لگوانا چاہتا –