کراچی: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رکن صوبائی اسمبلی (ایم پی اے) راجہ اظہر نے شکایت کی ہے کہ کراچی پولیس ڈیپارٹمنٹ پارٹی کے احتجاج کے دوران حراست میں لیے گئے کارکنوں کی رہائی کے لیے تاخیری حربے استعمال کر رہا ہے۔
وزیرآباد میں پارٹی سربراہ عمران خان پر لانگ مارچ کے دوران فائرنگ کے واقعے کے خلاف کراچی پولیس نے پی ٹی آئی کے ایک درجن سے زائد کارکنوں کو گرفتار کرلیا۔ ایم پی اے اظہر بھی لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ کے دوران زخمی ہوئے جس پر پولیس کی نفری بحال ہوئی۔

PTI announces protest drive against K-Electric from tomorrow

Image Source: MM News TV

ایم پی اے راجہ اظہر گرفتار پی ٹی آئی کارکنوں کی رہائی کے لیے آرٹلری میڈن تھانے پہنچ گئے۔ پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے کہا کہ وہ ڈیڑھ گھنٹے سے زیادہ زخمی حالت میں تھانے میں بیٹھے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پولیس حکام زیر حراست کارکنوں کی رہائی کے لیے تاخیری حربے استعمال کر رہے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے احتجاج میں شریک 16 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔
اس سے قبل کراچی پولیس نے شارع فیصل پر پی ٹی آئی کے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کا سہارا لیا۔
وزیرآباد میں لانگ مارچ کے دوران عمران خان پر بندوق کے حملے کے خلاف ایف ٹی سی فلائی اوور کے قریب شارع فیصل پر پی ٹی آئی کے کارکن بڑی تعداد میں جمع ہوئے۔
پی ٹی آئی کے مظاہرین کی پیش قدمی روکنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری آرٹیریل روڈ پر تعینات ہے۔ پولیس اہلکاروں نے پی ٹی آئی کارکنوں کو سڑک پر احتجاج کرنے سے روکنے کی کوشش کی۔
پی ٹی آئی کے کارکنوں نے پولیس کال کو مسترد کر دیا اور رکاوٹیں ہٹانے کے بعد شارع فیصل پر پیش قدمی شروع کر دی۔
بعد ازاں پولیس نے ریجنٹ پلازہ کے قریب پی ٹی آئی کارکنوں کو منتشر کرنے کی کوشش میں لاٹھی چارج اور آنسو گیس کے گولے داغے۔ پولیس اہلکاروں نے پی ٹی آئی کارکنوں کو روکنے کے لیے ہوائی فائرنگ بھی کی۔
آنسو گیس کی شیلنگ سے کئی خواتین اور بچے متاثر ہوئے۔ کراچی پولیس نے خواتین سمیت پی ٹی آئی کے متعدد کارکنوں کو گرفتار کرلیا۔
پولیس کے لاٹھی چارج کے بعد بھگدڑ مچنے سے پی ٹی آئی کے رکن صوبائی اسمبلی (ایم پی اے) راجہ اظہر زخمی ہوگئے۔ پولیس کی شیلنگ کے دوران ایم پی اے راجہ اظہر بھی زخمی ہوئے بعد ازاں انہیں جناح اسپتال منتقل کردیا گیا۔