لاہور (وقائع نگار خصوصی) سپریم کورٹ کے وکلاء کے وفد نے سینیٹر بیرسٹر علی ظفر، عابد زبیری اور امتیاز رشید صدیقی کی قیادت میں وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویزالٰہی سے ان کے دفتر میں ملاقات کی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔

سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی، مشیر عامر سعید راں اور حسن نیازی ایڈووکیٹ بھی موجود تھے۔

وزیراعلیٰ نے اعلان کیا کہ صوبے کی ہر تحصیل اور ضلع میں وکلاء کالونیاں قائم کی جائیں گی، وکلاء اور ان کے اہل خانہ کو بھی گزیٹڈ افسران کے برابر مفت طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ انہوں نے پبلک ڈیفنڈر ایکٹ کو بغیر کسی تاخیر کے بحال کرنے کا اعلان کیا اور مزید کہا کہ اس ایکٹ کے ذریعے 1500 کے قریب وکلاء کو جگہ دی جائے گی۔

image source: Dawn

وزیراعلیٰ نے شاہ چراغ بلڈنگ کے قریب پارکنگ پلازہ اور پبلک پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ کے لیے سروس سٹرکچر کی تعمیر کا اعلان کیا۔

پرویز الٰہی نے پنجاب بار کونسل اور ہاسٹل کی عمارتوں کی مرمت کا مزید اعلان کیا اور بتایا کہ پی بی سی کی عمارت ان کے آخری دور میں مکمل ہوئی تھی۔ “میں نے ہمیشہ قانونی برادری کی فلاح و بہبود کو ترجیح دی ہے اور سپریم کورٹ کے وکلاء کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے اعلان کیا اور مزید کہا کہ آئندہ چند روز میں عملی کام نظر آئے گا جبکہ وکلاء برادری کے لیے ان کے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں۔ ”
عامر سعید ران نے بتایا کہ پارکنگ پلازہ کے ڈیزائن کی منظوری 2017-18 میں دی گئی تھی۔ علی ظفر اور دیگر نے اپنے مسائل کے حل پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پرویز الٰہی نے اپنے آخری دور میں جو کام کیے وہ آج بھی عوام کو یاد ہیں۔