اسلام آباد: پاکستان ریلوے مسافروں کی سہولت اور محکمے کے لیے محصولات پیدا کرنے کے لیے ایک اعلی سروس کے طور پر جنوری کے وسط میں اسلام آباد سے کراچی تک گرین لائن مسافر ٹرین آپریشن دوبارہ شروع کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔
وزارت ریلوے کے ایک اہلکار نے اے پی پی کو بتایا کہ “ٹرین میں دو اے سی پارلر، پانچ اے سی بزنس، چھ اے سی اسٹینڈرڈز، اور چار سے پانچ اکانومی کلاس کوچز شامل ہیں جو روٹ پر مسافروں کو سہولت فراہم کریں گے۔

Pakistan Railways set to resume Green Line Train operations - Economy.pk

Image Source: Economy.pk

 

انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کی ہدایت پر کیا گیا، جو مسافروں کے لیے گرین لائن مسافر ٹرین کے بہترین انتظامات چاہتے تھے۔
اہلکار نے بتایا کہ وزیر نے متعلقہ اہلکار کو لاہور سے کراچی تک گرین لائن کے سفر کے وقت کو 20 گھنٹے سے کم کرنے کی بھی ہدایت کی جس سے مسافروں کا اعتماد بحال ہوگا۔
“گرین لائن ٹرین میں بہترین سفری سہولیات فراہم کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جس میں اعلیٰ معیار کے کھانے کی فراہمی اور ٹکٹ کی قیمت کو سستی سطح پر رکھنا شامل ہے۔ اس کے علاوہ، اے سی پارلر کی ہر سیٹ پر ایک الگ ایل سی ڈی نصب کیا جائے گا تاکہ مسافر ہیڈ فون کے ذریعے پسندیدہ ویڈیوز سے لطف اندوز ہو سکیں۔
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ گرین لائن ٹرین نے گزشتہ 20 دسمبر سے آپریشن شروع کرنا تھا لیکن کچھ مالی اور دیگر مسائل کی وجہ سے اب یہ جنوری کے وسط سے کام شروع کر دے گی۔
ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان ریلویز پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کرکے مسافر ٹرینوں کے ساتھ ساتھ بڑے ریلوے اسٹیشنوں پر خدمات کو بہتر بنانے کے لیے بھی کام تیز کرنے جا رہا ہے جس سے بڑھتے ہوئے مسائل خصوصاً صفائی سے متعلق مسائل کو حل کرنے میں مدد ملے گی۔
“محکمہ کا خیال تھا کہ ٹرینوں اور لاہور، فیصل آباد، کراچی، راولپنڈی، کوئٹہ، پشاور، خانیوال، سکھر، ساہیوال، ملتان اور بہاولپور سمیت بڑے اسٹیشنوں پر صفائی سے متعلق خدمات تسلی بخش نہیں ہیں”۔ .
انہوں نے کہا کہ اگر فاسٹ ٹریک پالیسی کے تحت پرائیویٹ سیکٹر کی خدمات حاصل کی جائیں تو سٹیشنوں اور ٹرینوں میں حفظان صحت کے حالات بہتر ہو سکتے ہیں جس سے مسافروں کا محکمہ پر اعتماد بھی بحال ہو گا۔
عہدیدار نے بتایا کہ وزیر نے عہدیداروں سے یہ بھی کہا کہ وہ ایک پالیسی کے تحت بڑے ریلوے اسٹیشنوں پر اسٹالوں کے ڈیزائن اور سائن بورڈز میں یکسانیت لانے کی کوششیں تیز کریں۔
عہدیدار نے کہا کہ حکومت پاکستان ریلوے کی کارکردگی کو بہتر بنانے کے لیے متعدد اقدامات کر رہی ہے اور عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کرے گی۔