لاہور: ایک متوفی ریٹائرڈ فوڈ انسپکٹر کو بالآخر 22 سال بعد سپریم کورٹ (ایس سی) سے انصاف مل گیا۔
تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں جسٹس سید منصور علی شاہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے انصاف کے انتظار میں انتقال کر جانے والے ریٹائرڈ فوڈ انسپکٹر کی پنشن اور مراعات ضبط کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

Regional human rights courts sign cooperation pact

Image Source: AA

محکمہ خوراک اور اکاؤنٹنٹ جنرل آفس کے افسران سپریم کورٹ لاہور میں پیش ہوئے۔ بنچ نے ریٹائرڈ فوڈ انسپکٹر کی پنشن اور مراعات ضبط کرنے پر افسران پر ناراضگی ظاہر کی۔
سپریم کورٹ نے استفسار کیا کہ 22 سال گزر گئے، آپ نے ریٹائرڈ فوڈ انسپکٹر کی پنشن اور واجبات ادا کرنے کا کیوں نہیں سوچا۔
سپریم کورٹ نے محکمہ خوراک اور اکاؤنٹنٹ جنرل آفس کے حکام کو ریٹائر ہونے والے ملازم کی پنشن اور واجبات اس کی بیوہ کو ایک ہفتے میں جاری کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔
اس سے قبل ڈیرہ اسماعیل خان کی رہائشی زیتون بی بی کو 46 سال کی طویل قانونی لڑائی کے بعد اپنے والد کی جائیداد سے وراثت کا حق مل گیا۔
زیتون بی بی کے بھائی نے 1976 میں اس کے حصے کی جائیداد پر قبضہ کیا۔
2018 میں زیتون بی بی کے بھائیوں نے ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا۔