پاکستان تحریک انصاف کے سابق رہنما سینیٹر اور ایم این اے کو پاکستان تحریک انصاف سے نکال دیا گیا – فیصل واوڈا نے لانگ مارچ سے ایک روز قبل پی ٹی ائی کے خلاف زہر اگلا تھا اور اس کے لیڈرز پر بے بنیاد الزامات عائید کیے تھے مگر اس کی اس تقریر پر عوام نے اسے آڑے ہاتھوں لیا اور اس پر سوشل میڈیا میں بے انتہا تنقید ہوئی -جس کے بعد عوام کے مطالبے پر پی ٹی آئی سندھ کے صدرعلی زیدی کی جانب سے فیصل واوڈا کوشوکاز نوٹس جاری کیاگیا تھا،شوکاز نوٹس میں فیصل واوڈا سے 2 روز میں جواب طلب کیاگیا تھا،جواب جمع نہ کرانے پر فیصل واوڈا کی پارٹی رکنیت ختم کی گئی ۔

 

یاد رہے کہ سینئر صحافی ارشد شریف کے قتل پر فیصل واوڈا نے اسلام آباد میں ہنگامی پریس کانفرنس کی تھی جس میں انہوں نے لانگ مارچ میں خون خرابے کے حوالے سے بیان دیا تھا جس پر ان سے جواب طلب کیاگیاتھا سب سے زیادہ خچرناک بات یہ تھی کہ انھوں نے ارشد شریف کے قتل کا شبہ اپنی ہی پارٹی کے رہنماؤں پر لگادیا تھا ۔