منگل اور بدھ کی درمیانی شب کوئٹہ میں فائرنگ سے تین بھائی قتل ہوگئے تھے اور ان کا ایک ملازم زخمی ہوگیا تھا. ابتدائی طور پر یہ اندھا قتل تھا اور کسی دہشتگردی یاڈکیتی کی وارادت لگتاتھا تاہم تفتیش کے دوران سامنے آیا کہ تینوں بھائیوں کو قتل کرنے والا کوئی اور نہیں بلکہ انہی کا 17 سالہ سگا بھائی ہے جس نے جائیداد اور پیسے کے لالچ میں تینوں بھائیوں کو ابدی نیند سلادیا .

 

 

پولیس نے تفتش کا سلسلہ شروع کیا تو ان کے تیسرے بھائی کے رویے نے انہیں شامل تفتیش کرنے پر مجبور کردیا اور اس واقعے کے خوف نے اس کی حرکات وسکنات کو مشکوک بنایا تو پولیس نے اس سے بھی سوالات اور تفتیش شروع کی تو وہ اعصاب پر قابو نہ رکھ سکا اور خوف کی وجہ سے اس نے خود ہی اس بات کا اقرار کرلیا کہ اس قتل کے پیچھے کوئی دوسرا نہیں بلکہ وہ خود ہے .

 

 

ملزم ایک معروف آرتھو پیڈک سرجن کا بیٹا ہے -ملزم کا کہنا تھا کہ بھائیوں کے رویے کی وجہ سے وہ ان سے بدگمان رہتاتھا جس کی اپنے بھائیوں سے تکرار ہوتی رہتی تھی، اس کے علاوہ اس کے دل میں جائیداد کا لالچ بھی تھا .