پاکستان میں بجلی کی کمی کو پورا کرنے کے لیے حکومت نے دکانداروں کو سخت ہدایت جاری کی تھی کہ مارکیٹس رات 10 بجے بند کردی جائیں مگر بہت سے دکان دار اس پر عمل کرنے کی بجائے دکانیں کھولے رکھتے تھے جس پر ہائی کورٹ نے سخت ردعمل دیتے ہوئے ان دکانداروں کو قانون کے تابع لانے کا فیصلہ کیا اور نیا حکم نامہ جاری کردیا -لاہور ہائیکورٹ نے رات 10 بجے کے بعد کھلی رہنے والی مارکیٹوں پر 2 لاکھ روپے جرمانہ عائد کرنے کا حکم جاری کر دیاہے ۔

 

عدالت نے سی سی پی او لاہور سمیت دیگر افسران کو فوری احکامات پر عملدرآمد کروانے کا حکم جاری کر دیاہے ، سیکریٹری جنرل درخواست ہے کہ تاحیات رات 10 بجے مارکیٹیں بند کروانے کا حکم فرما دیں تاکہ مستقل طور پر ہی بجلی کی بچت کی جاسکے ۔ سیکریٹری جنرل سپرمارکیٹ نے عدالت میں کہا کہ رات 10 بجے مارکیٹیں بند کرنے پر سب کا اتفاق ہے ۔ لاہور ہائیکورٹ نے ریمارکس دیئے کہ ہمیں اپنا لائف سٹائل تبدیل کرنا ہو گا۔ دکانیں جلد بند کرنے سے حکومت کو کئی ارب روپے کی بچت ہوگی