اسلام آباد: سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے بدھ کے روز کہا کہ حکومت کی مدت صرف غیر معمولی حالات میں بڑھائی جا سکتی ہے۔
مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر اے آر وائی نیوز کے تفتیشی سیل کے سربراہ نعیم اشرف بٹ سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ غیر معمولی صورتحال کے بغیر ایسا اقدام مثبت اقدام نہیں ہوگا۔

Shahid Khaqan Abbasi downplays Imran Khan's long march

Image Source: The News International

عباسی نے کہا، “ہمیں کچھ نکات پر بات کرنے کا شوق ہے، ‘ٹیکنو کریٹ سیٹ اپ’ ان میں سے ایک ہے۔” سابق وزیراعظم نے کہا کہ بحیثیت سیاستدان یہ میرا فرض ہے کہ میں تمام غیر جمہوری اور غیر آئینی اقدامات کی مخالفت کروں۔
مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ اسد قیصر کو یہ بتانا چاہیے کہ انہیں ‘ٹیکنو کریٹ سیٹ اپ’ کے بارے میں کس نے پیغام دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ وہ نام بتائیں، اگر ن لیگ کے پلیٹ فارم سے ٹیکنوکریٹ سیٹ اپ تجویز کیا گیا تو میں اس کی مخالفت کروں گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ “ہماری پارٹی کے اندر ٹیکنوکریٹک سیٹ اپ کے بارے میں کوئی بات نہیں ہوئی۔”
مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ آئین کی خلاف ورزی کرنے والے اسپیکر سے سچائی کی توقع کیسے کی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ہمیشہ معجزات کی تلاش میں رہتے ہیں لیکن ملک کے مسائل کا کوئی معجزاتی حل نہیں ہوتا۔
انہوں نے مزید کہا کہ ’اب تک جو فیصلے لیے گئے ہیں وہ کچھ نہیں ہیں، ہمیں مشکل فیصلوں کا ایک طویل عمل جاری رکھنا ہے۔