کراچی: سندھ کے وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چوہدری پر ‘ہارس ٹریڈنگ’ کا الزام لگانے پر انہیں قانونی نوٹس بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔
ایک بیان میں صوبائی وزیر نے پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے اس حوالے سے قانونی نوٹس بھیجنے کا اعلان کیا۔

Fawad Chaudhry - Wikipedia

Image Source: WikiPedia

شرجیل میمن نے بیان میں پی ٹی آئی رہنما سے کہا کہ وہ الزامات ثابت کریں اور ان کے خلاف پنجاب میں مقدمہ درج کریں۔
واضح رہے کہ فواد چوہدری نے سندھ کے دو وزرا شرجیل انعام میمن اور ناصر حسین شاہ کے خلاف پنجاب میں ہارس ٹریڈنگ کا الزام لگا کر مقدمہ درج کرنے کا اعلان کیا تھا۔
انہوں نے الزام لگایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش ہونے کے بعد صوبائی وزرا نے پی ٹی آئی کی دو خواتین ایم پی اے کو رقم کی پیشکش کی۔
انہوں نے اعلان کیا کہ ایم پی اے خریدنے کی کوشش کرنے پر سندھ کے دو وزرا کے خلاف نااہلی کا ریفرنس دائر کیا جائے گا۔
فواد چوہدری نے عدالتی احکامات کے باوجود اسلام آباد کے لوکل گورنمنٹ (ایل جی) انتخابات کے انعقاد کی مخالفت کرنے پر وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کی بھی سرزنش کی۔
ثناء اللہ کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے فواد چوہدری نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ اگر وزیر داخلہ اسلام آباد بلدیاتی انتخابات کے لیے سیکیورٹی نہیں دے سکتے تو انہیں اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دینا چاہیے۔
پڑھیں: اسلام آباد بلدیاتی انتخابات: رانا ثناء اللہ کا کہنا ہے کہ ‘آئی ایچ سی کا حکم قابل عمل نہیں’
انہوں نے کہا کہ ثناء اللہ نے جب بھی الیکشن کرائے ہمیشہ ذلت آمیز شکست کا سامنا کیا۔
فواد نے الزام لگایا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے ماتحت ادارے کے طور پر کام کر رہا ہے۔