شہباز شریف نے جب اقتدار سنبھالا تو انہیں اسلامی ممالک سے امید تھی کہ ان کے پہلے دورے پر ہی ان کے لیے برادر اسلامی ممالک نوٹوں کی بوریوں کے منہہ کھول دیں گے مگر ایسا نہ ہوا اور 9 ماہ گزرنے کے باوجود ابھی تک سعودی عرب سے کوئی مدد نہیں ملی -اب پاکستان کو سعودی عرب سے امداد ملنے میں تاخیر کی وجہ سامنے آگئی۔ نجی ٹی ؤی سعودی عرب نے گرانٹ، ڈپازٹ اور سرمایہ کاری سب کی سب معاشی اصلاحات سے مشروط کردی۔سعودی وزیرخزانہ محمد بن عبداللہ الجدان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ پہلے کسی شرط کے بغیر پیسے دے دیا کرتے تھے، اب ایسا نہیں ہوگا، سعودی عرب اپنے لوگوں سے ٹیکس لیتا ہے، جو ہم سے امداد لیتے ہیں، انہیں بھی یہی کرنا ہوگا، ٹیکس نظام میں اصلاحات لانا ہوں گی۔

انہوں نے ڈیووس میں جاری عالمی اقتصادی فورم سے خطاب میں کہا کہ سعودی عرب غیر مشروط گرانٹس کا طریقہ بدل رہا ہے، پاکستان، ترکی، مصر کی مدد جاری رہے گی، انہیں بھی چاہیے کہ معاشی اصلاحات کریں۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں 10 ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری کا منصوبہ ہے، پاکستان کو دیے گئے ڈپازٹس کی مدت بڑھا چکے ہیں، تیل اور دیگر سہولتیں دے رہے ہیں، پاکستان کو بھی جواب میں کچھ نہ کچھ کرنا ہوگا۔