پاکستان میں ایک طرف سیلاب نے ہر شخص کا جینا محال کررکھا ہے بجلی کے بلوں اور مہنگائی نے پاکستانیوں کی ایک وقت کی روٹی کھانی بھی مشکل بنا دی ہے مگر دوسری جانب سیاست دان اس مشکل وقت میں بھی ایک دوسرے کے گلے پکڑنے پر تلے ہوئے ہیں اور اپنے رہنماؤں کو یہ کہنے کی بجائے کہ اپنے اپنے حلقے میں جاکر لوگوں کی مدد کریں وہ پھر صرف سرکاری بیان جاری کررہے ہیں کہ اپنی جان کیسے بچانی ہے کیسوں سے کیسے بچنا ہے؟ ان سیاست دانوں کو شرم سے ڈوب مرنا چاہیے کہ ابھی بھی وہ انتقامی سیاست پر توجہ مرکوز کرکے عوام کو بتا رہے ہیں کہ وہ کتنے خود غرض اور سنگدل ہیں

پاکستان مسلم لیگ (ن )نے اپنے رہنماؤں اور کارکنوں کو گرفتاریوں سے بچنے کے لیے محتاط رہنے کی ہدایت کر دی ہے جبکہ با قاعدہ ہدایت نامہ جاری کیا گیا ہے۔

مسلم لیگ ن نے اپنے رہنماؤں و کارکنوں کو اپنی رہائش گاہوں اور دفاتر پر سی سی ٹی وی کیمرے لگوانے کی بھی ہدایت کر دی ہے۔ ساتھ ہی پارٹی کی جانب سے باقاعدہ ہدایت نامہ جاری کیا گیا ہے،رہنماؤں اور کارکنوں کو پارٹی کی جانب سے دی گئی ہدایات میں کہا گیا ہے کہ اگر پولیس گرفتاری کے لیے چھاپا مارے تو اہل کاروں کی سی سی ٹی وی فوٹیج بنائی جائے اور سی سی ٹی وی کیمرے نہ ہونے کی صورت میں پولیس چھاپے کی موبائل سے وڈیو لازمی بنائی جائے۔