پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے دوران میڈیا گیلری سنسان :عارف علوی بھی پریشان

پاکستان میں میں احتجاج کا موسم 12 مہینے چلتا رہتا ہے آج کل پاکستان میں میڈیا کے نمائیندے پارلیمنٹ کے باہر میڈیا پر لگائی جانے والی پابندیوں کے خلاف سراپا احتجاج ہیں مگر عمران خاں صاحب کسی کی بات سننے کو تیار نہیں ہیں یہ وہی خاں صاحب ہیں جو کنٹینر پر چڑھ کر میڈیا کے لیے تالیں بجوایا کرتے تھے اور ان کے مینار پاکستان میں جلسے کی کامیابی میں 50 فیصد ہاتھ اسی میڈیا کا تھا جس سے اج وہ خفا خفا نظر آتے ہی

صدر پاکستان ڈا کٹر عارف علوی نے پیر کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا ،اس دوران خالی میڈیا گیلری نے صدر کو بھی حیران کردیا ان کی تقریر کے دوران اور اپوزیشن ارکان پارلیمنٹ ہاؤس کے اندر اور باہر احتجاج کرتے رہے ۔

اپنے خطاب کے دوران ، صدر نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے میں میڈیا کے کردار کو سراہا۔ تاہم ، خالی پریس گیلری ان کے لئے بڑی الجھن کاباعث بنتی رہی ۔

image source :Dawn

صدر کو بظاہر اندازہ نہیں تھا کہ پریس گیلری خالی کیوں ہے۔ مشترکہ سیشن کے آغاز سے قبل میڈیا اہلکاروں اور صحافیوں کو پریس گیلری میں داخل ہونے سے منع کیا گیا تھا۔رپورٹ کے مطابق پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن (پی آر اے) کے ارکان نے صورتحال کے بارے میں پوچھنے کی کوشش کی لیکن وہ یہ نہیں جان سکے کہ پریس کو پارلیمنٹ میں داخل ہونے سے روکنے کے احکامات کس نے جاری کیے ہیں۔

جب وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری سے ایک رپورٹر کی جانب سے اس اقدام کے بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ انہیں اس بارے میں کوئی اندازہ نہیں ہے۔ “یہ کورونا وائرس کی وجہ سے بند ہوسکتا ہے ،” اس نے رپورٹر کو بتایا ، اور پھر اس سے پوچھا کہ کیا صحافیوں نے اسپیکر کے دفتر سے اس اقدام کے بارے میں پوچھا ہے۔

پریس گیلریوں کو میڈیا کو صدارتی خطاب کی کوریج سے روکنے کے لیے بند کر دیا گیا تھا ، جیسا کہ ایک دن پہلے ، پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن (پی آر اے) نے لوگوں کے منتخب گروپ کو دعوت نامہ جاری کرنے کے بارے میں تحفظات کا اظہار کیا تھا جس کا کوریج سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ پارلیمنٹ پی آر اے کے مطابق ، اسپیکر نے ، حکومتی دباؤ کے تحت ، پریس گیلریوں کو بند کرنے کا حکم دیا ، جس میں پارلیمانی رپورٹرز نے احتجاج اور واک آؤٹ کیا۔

۔

Read Previous

پاکستانی کرکٹ ٹیم نومبر میں بنگلہ دیش کا دورہ کریگی

Read Next

جب پاکستان صحافیوں کو نام دیتا ہے تو پاکستان کے خلاف بات کیوں؟؟؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *