مہنگائی کے خلاف اے این پی کا احتجاج اور ریلی

شکر ہے پاکستانی عوام کے غم کا رونے والوں میں کسی جماعت کو تو مہنگائی پر بھی احتجاج یاد آیا ورنہ اپنے مطلب کے علاوہ یہ کبھی سڑکوں پر آنے والے کہاں ہیں یہی حالت مسلم لیگ نون اور جمیعت علمائے اسلام کی بھی ہے جنہوں نے مہنگائی کے معاملے پر چپ کا 365 دن کا روزہ رکھا ہوا ہے پیپلز پارٹی نے تو خیر سے وہ عینک لگارکھی ہے جس سے انہیں عوام دودھ کی نہروں میں نہاتے اور شہد کھاتے دکھئی دیتے ہیں اسی لیے آج تک 3 سال میں انھوں نے مہنگائی کے خلاف کوئی ریلی نہیں نکالی البتہ اج خان صاحب کے سب سے مضبوط گڑھ کے پی کے کے

صوبائی دارالحکومت میں پختون قوم پرست پارٹی کے سینئر رہنما اور سابق وفاقی وزیر غلام احمد بلور اور سابق صوبائی وزیر سید عاقل شاہ نے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی ریلی کی قیادت کی۔ریلی کے شرکاء نے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی ناکام معاشی پالیسی اور بے مثال قیمتوں میں اضافے کے خلاف نعرے لگائے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے غلام احمد بلور نے کہا کہ حکومت کھانے پینے کی اشیاء اور روزمرہ استعمال کی اشیاء کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہو چکی ہے۔اے این پی کے رہنما نے کہا کہ غریب اور متوسط ​​طبقے کے لوگ ضروری اشیاء کی اونچی قیمتوں کے متحمل نہیں ہو سکتے اور مزید کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد ضروری اشیاء اور کرایوں کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہو جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی قیادت والی حکومت کے دوران گھی ، کوکنگ آئل ، چینی اور گندم کے آٹے سمیت ضروری اشیاء کی قیمتوں میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔سید عاقل شاہ نے کہا کہ خوردنی اشیاء کے علاوہ گیس ، بجلی اور دیگر یوٹیلیٹی بلوں کے نرخوں میں بھی اضافہ ہوا ہے جبکہ مزدوروں کی تنخواہوں اور اجرت میں اضافہ نہیں کیا گیا۔

انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم اور وفاقی اور صوبائی وزراء یہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ ملک میں قیمتوں میں اضافہ اور مہنگائی نہیں ہے اور عوام حکومت کی کارکردگی سے کافی مطمئن ہیں۔

Read Previous

بعد از خدا توﷺ ہی فقط : قصہ مختصر

Read Next

دنیا بھر کے حوالے سے کرونا کے اعداد و شمار

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *