پاک فوج کے ایران میں کی گئی سٹرائیکس میں کون کون ماراگیا ؟

Mashkoor Hussnain
4 Min Read

ایران کی جانب سے بلوچستان میں کیے گئےحملوں کے جواب میں پاک فوج نے ایران میں پناہ لیے دہشت گردوں کو نشانہ بنایا تو اس میں پاکستان میں منظم دہشت گردی کرنے والے شرپسندوں کی تفصیلات بھی اب میڈیا کے ساتھ شئیر کی جارہی ہیں -پاک فوج کا دعویٰ ہے کہ ایران میں کیے گئے ان حملوں میں 7 انتہائی مطلوب دہشت گرد مارے گئے -ان میں دوستہعرف چئیرمین،سرور بشام ،وزیر عرف وازو اور ساحل لنگ شامل ہیں –

نجی ٹی وی کی خبر کے مطابق ہلاک دہشتگرد دوستہ عرف چئیرمین ضلع پنجگور کا رہائشی تھا جس نے 2013 میں بلوچ لبریشن فرنٹ میں شمولیت اختیار کی اور بی ایل ایف کے کمانڈر فضل شیر عرف طاہر گروپ کا رکن تھا۔دوستہ زامران سیکٹر میں منشیات فروشی، لوٹ مار میں ملوث ہونے کے ساتھ ساتھ پروم سیکٹر میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے خلاف متعدد حملوں میں ملوث رہا۔دوستہ 20 ستمبر 2019 کوپروم میں اسکول اور ایف سی پوسٹ ، 23 مئی 2020 کو پروم کے علاقے میں ایف سی کی پوسٹ اور 04 ستمبر 2022 کو یوسف پوسٹ پرہونے والے بارودی سرنگ کے دھماکے میں بھی ملوث تھا۔اس کے ساتھ ساتھ وہ 19 جنوری 2023 کو اخلاق عرف شوکت ولد کلری گچیک کے اغوا میں ملوث تھا جس کو 3 مارچ 2023 کو بالگتر کے علاقے میں قتل کر دیا۔ اس نے گزشتہ سال 12 اپریل 2023 کو ایف سی کے قافلے کو بھی نشانہ بنایا۔

ہلاک دہشتگردوں میں اصغر عرف بشام کا بیٹا سرور بھی شامل ہے ، جو ضلع پنجگور کا رہائشی تھا۔8جون 2021 کو اصغر عرف بشام نے فرنٹیئر کور کی پٹرولنگ پارٹی پر گاواش چکر بازار جبکہ20 جولائی 2021 کو ضلع پنجگور میں فرنٹیئر کور کی پٹرولنگ پارٹی کو فائرنگ کا نشانہ بنایا۔ اس نے فروری 2023 میں پنچگور کے بس اسٹینڈ پر فائرنگ کر کے محمد انصر کو شہید کیا ۔

ہلاک ہونے والےدہشتگرد محمد وزیر عرف وازو نے ابتدائی طور پر 2013/14میں بلوچ ریپبلکن آرمی میں جبکہ 2019میں بلوچ لبریشن فرنٹ میں شمولیت اختیار کی۔ وہ بی ایل ایف کے دہشتگرد عابد عرف چاکر کا بھائی تھا۔ وہ پروم اور گوارگو، ضلع پنجگور میں متعدد دہشتگردانہ سرگرمیوں کا حصہ تھا۔اس نے 14 ستمبر 2020 کو پنجگور کے احمد اللہ ولد بشیر اور عامر ولد محمد حنیف کو ٹارگٹڈ حملے میں نشانہ بنا کر شہید کر دیا۔ وازو نے4 مارچ 2023 کو، پل ناکہ پوسٹ پر گرینیڈ حملہ کیا اس کے بعد01 مئی 2023 کوکسٹم آفس ایریا کے قریب ایف سی کانوائےکو بارودی سرنگ کا نشانہ بنایا۔ہلاک دہشتگرد بجر عرف سوغات 2016 سے بی ایل ایف کا حصہ تھاجو کہ پروم سیکٹر میں قانون نافذ کرنے والے اداروں پر متعدد دہشتگردانہ حملوں میں ملوث تھا۔ بجر نے7 مارچ 2023 کو نذیر ولد بہرام کو اس کی رہائش گاہ سے اغوا کیا اور بعد ازاں 8 اپریل 2023 کو شہید کر دیا۔4 مارچ 2023 کو پل ناکہ پوسٹ پر گرینیڈ حملے جبکہ 01 مئی 2023 کسٹم آفس ایریا کے قریب ایف سی کانوائے کو بارودی سرنگ کا نشانہ بنانے میں بجر شامل تھا۔

ہلاک دہشت گردوں میں ساحل لنگ عرف شفق بھی شامل تھا ، جو معصوم پاکستانیوں اور سیکیورٹی فورسز کیخلاف متعدد دہشت گرد حملوں میں ملوث رہا۔ ساحل لنگ دہشت گرد بلبل کا بھائی تھا جو مارگٹ اور ہرنائی کے علاقے میں بھتے اور دہشت گردی کی کارروائیوں میں مُلوث ہونے کی بنا پر پولیس کو مطلوب تھا ۔

Share This Article
Leave a comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *