امریکی مسلمان رہنماؤں نے ” بائیڈن کو روکو ” مہم شروع کردی

Mashkoor Hussnain
2 Min Read

حماس کے حملوں کے جواب میں اسرائیل نے غزہ پر جو فضائی حملے شروع کیے اور شہریوں کی عمارات کو ملبے کا ڈھیر بنانا شروع کیا اس پر دنیا بھر میں بسے لوگوں کا شدید ریاکشن آیا مگر اس کے باوجود امریکی صدر نے اسرائیل کے حملوں کی نہ صرف حمایت کی بلکہ اسلحے سے بھرے جنگی بیڑے بھی اسرائیل بھیج دیے جس پر امریکہ سمیت جو بائیڈن کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور اب جنگ بندی کے بعد ایک مرتبہ پھر اسرائیلی حملوں کے سبب دنیا بھر سے اس جنگ کا ذمہ دار امریکی صدر جو بائیڈن کو قرار دیا جارہا ہے –
ایسا لگتا ہے کہ امریکہ میں ہونے والے عام انتخابات سے پہلے ہی بائیڈن کی مقبولیت گرنے لگی ہے بائیڈن کو اسرائیل کی حمایت مہنگی پڑ گئی ،امریکہ میں ’’بائیڈن کو روکو‘‘ مہم شروع ہو گئی ۔تفصیلات کے مطابق غزہ کے معصوم فلسطینیوں پر وحشیانہ بمباری کرنے والے اسرائیل کی حمایت امریکہ کے صدر جو بائیڈن کو مہنگی پڑ گئی جو بائیڈن کو دوبارہ صدارت کی دوڑ میں شامل ہونے سے روکنے کے لیے امریکہ کے مسلمان رہنماؤں نے بائیڈن کو روکو مہم شروع کردی۔

ریاست منی سوٹا سے شروع ہوئی بائیڈن مخالف مہم مشی گن، ایری زونا، وسکونسن، پنسلوانیا اور فلوریڈا تک پھیل گئی۔ گزشتہ انتخابات میں بائیڈن کی حمایت کرنے والے مسلمان اپنے بائیڈن کو دیے گئے ووٹ پر شرمندگی محسوس کرنے لگے ہیں – امریکی مسلمان رہنماؤں کا کہنا ہے کہ فلسطینیوں کی نسل کشی میں ساتھ دینے والے بائیڈن کو دوبارہ صدر بننے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔یاد رہے کہ کہ گزشتہ انتخابات میں جو بائیڈ ن کی کامیابی میں مسلمانوں کے ووٹ کا بڑا ہاتھ تھا 90 فیصد مسلمانوں نے بائیڈ کو ووٹ کیا تھا –

Share This Article
Leave a comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *