کراچی سے لاہور جانے والی ٹرین کراچی ایکسپریس کی بوگی میں آگ لگ گئی جس کے نتیجے میں ایک ہی بدنصیب خاندان کے 4 بچوں سمیت 7 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں ۔ ٹرین کی بزنس کلاس بوگی میں روہڑی سٹیشن سے پہلے آگ لگی جس کے بعد ڈرائیور نے ٹرین روک دی اور مسافروں کو متاثرہ بوگی سے نکالا گیا،ریلوے ذرائع نے بتایا کہ آگ سے متاثرہ بوگی کو ٹرین کی دیگر بوگیوں سے علیحدہ کر کے آگ بجھادی گئی۔

 

 

ٹرین حادثے کے دوران 4 بجے لاپتا ہوگئے اورکافی دیر بعد چاروں بچوں کی لاشیں جلی ہوئی بوگی سے مل گئیں، کچھ دیر بعد جلی ہوئی بوگی سے ایک اور شخص کی لاش ملی۔ پولیس نے تصدیق کی ہے کہ آگ لگنے کے 4 بچوں سمیت 7 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔اب تک کی اطلاعات کے مطابق جاں بحق خاتون اور چاروں بچے ایک ہی خاندان کے ہیں۔

 

 

دوسری جانب ڈی سی او سکھر محسن سیال نے بتایا کہ حادثے میں خاتون سمیت دو افراد جاں بحق ہوئے ہیں ، خاتون آگ لگنے کے بعد ایک خاتون نے چلتی ٹرین سے چھلانگ لگادی تھی جسے ہسپتال منتقل کیا گیا مگر وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئی۔حکام نے بتایا کہ دوسرا انجن منگوا کر ٹرین کے پچھلے حصے کو گمبٹ روانہ کر دیا گیا ہے تاہم حادثے کے باعث اپ ٹریک تاحال معطل ہے۔اب تک یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ اسی ایک بوگی میں اچانک اتنی تیز آگ کیسے بھڑک اٹھی؟