پاکستان میں جو دہشت گردی کی لہر چند ماہ پہلے کے پی اور افغان بارڈر سے شروع ہوئی تھی اب اس کا دائرہ پنجاب کے شہروں تک پھیل گیا ہے –
پاکستان کے شہر خانیوال میں آج دہشت گردی کا ایک خوفناک واقعہ پیش آیا جس میں شر پسندوں نے سی ٹی ڈی کے 2 ااہلکاروں کو نشانہ بنا یا جو موقع پر ہی شہید ہوگئے -گمان ہے کہ دہشت گردوں نے بنوں جیل حملے میں مارے جانے واکے دہشت گردوں کی موت کا بدلہ لینے کے لیے ان 2 افراد کا انتخاب کیا گیا -دہشت گردوں کو شبہ تھا کہ یہ دونوں افراد ان کے ساتھیوں کو مارنے والے سکواڈ کا حصہ تھے –

 

خانیوال میں ایک ہوٹل کے پارکنگ ایریا میں موٹر سائیکل سوار دہشتگرد کی فائرنگ سے شہید ہونے والوں کی شناخت ڈائریکٹر سی ٹی دی نوید سیال اور انسپکٹر ناصر عباس کےنام سے ہوئی ۔ہوٹل کے پارکنگ ایریا میں فائرنگ کے واقعے کی سی سی ٹی وی ویڈیو بھی سامنے آئی تھی جس میں دہشتگرد کو فائرنگ کرے دیکھا گیا تھا۔اب سیکیوریٹی اداروں نے اس شخص کی تصویر جاری کردی جو اس فائرنگ میں ملوث تھا اس دہشت گرد کا نام عمیر نیازی ے اور اس کا تعلق خانیوال سے ہی ہے -دوسری جانب وزیر داخلہ رانا ثنااللہ نے خانیوال میں فائرنگ سے 2 سی ٹی ڈی افسران کی شہادت کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے چیف سیکریٹری اور آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کہ سی ٹی ڈی افسران پر فائرنگ کا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے، پنجاب میں امن امان کی صورتحال باعث تشویش ہے، پنجاب حکومت ایسے واقعات کے روک تھام کے لیے اقدامات کرے۔