اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے قومی اسمبلی سے اپنے اراکین کے استعفوں کی تصدیق کے لیے دوبارہ سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔
ذرائع کے مطابق سابق حکمران جماعت پارلیمنٹ کے ایوان زیریں سے اپنے ارکان کے استعفوں کا معاملہ اٹھائے گی۔ پارٹی کے قانونی ماہرین نے کیس کی تیاریاں شروع کر دی ہیں۔

PTI changes tack, PM Imran and party members to attend NA session

Image Source: The Express Tribune

پارٹی ذرائع نے بتایا کہ “پی ٹی آئی نے اسپیکر قومی اسمبلی کے ‘بد نیتی’ کی وجہ سے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ‘ایوان کا اجلاس اس وقت ملتوی کردیا گیا جب پی ٹی آئی نے اسمبلی کا دورہ کرنے اور اسپیکر سے ملاقات کا فیصلہ کیا’۔ ذرائع کے مطابق، “پارٹی کی جانب سے انہیں بلانے کے اعلان کے بعد اسپیکر چھٹی پر چلے گئے،” ذرائع کے مطابق۔
پارٹی ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی آئی نے اس معاملے پر سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔
پی ٹی آئی نے اس سے قبل قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف کو خط لکھنے کا فیصلہ کیا تھا تاکہ قانون سازوں کے استعفوں کے لیے وقت طلب کیا جا سکے۔
اس پیشرفت سے باخبر ذرائع نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ پی ٹی آئی کے نائب صدر شاہ محمود قریشی کو قومی اسمبلی کے اسپیکر کو خط لکھنے کا کام سونپا گیا ہے تاکہ وہ اپنے استعفوں کی تصدیق کے عمل کے لیے اراکین قومی اسمبلی کے دورے کا وقت مانگیں۔
قبل ازیں پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری نے ٹوئٹر پر کہا تھا کہ پارٹی اشرف کو خط لکھ رہی ہے کہ وہ وقت مانگا جائے جب ارکان اسمبلی تصدیق کے عمل کے لیے قومی اسمبلی کا دورہ کر سکیں۔
قبل ازیں قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف نے کہا تھا کہ اگر انہیں قانون سازوں پر کسی قسم کے دباؤ کا سامنا ہوا تو وہ استعفے قبول نہیں کریں گے۔
قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف نے ایک بیان میں کہا کہ مدت پوری ہونے سے پہلے اسمبلی تحلیل کرنے سے جمہوریت مضبوط نہیں ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیک ڈور مذاکرات کا آپشن تمام اسٹیک ہولڈرز کے لیے ہمیشہ دستیاب ہے۔