منی لانڈرنگ کیس میں مفرور قرار دیے جانے والے اور لندن میں قیام پذیر سلمان شہباز نے حفاظتی ضمانت کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) میں درخواست دائر کردی۔

سلمان نے اپنی درخواست میں کہا کہ میں اپنے خلاف کیس میں عدالت میں پیش ہونے کے لیے پاکستان واپس آنا چاہتا ہوں۔ اس نے IHC سے استدعا کی کہ اسے اپنے خلاف عدالت میں زیر سماعت کیس میں پیش ہونے کے لیے حفاظتی ضمانت دی جائے۔

IHC to form larger bench to hear PTI's plea against prohibited funding  verdict - Pakistan - DAWN.COM

image source: Dawn

عدالت نے سلمان شہباز اور طاہر نقوی کو رواں سال جولائی میں منی لانڈرنگ کیس میں مفرور قرار دیا تھا۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے سلمان کو حوالے کرنے کے لیے حکومت برطانیہ کو خط لکھا تھا، جو منی لانڈرنگ اور ٹیلی گرافک ٹرانسفر اسکینڈل کے تحت احتساب کے نگراں ادارے کو مطلوب تھے۔

ایک احتساب عدالت نے 2019 میں منی لانڈرنگ کیس میں سلمان شہباز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری کیے تھے۔

فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کے بینکنگ کرائم سرکل نے اپنے ملازمین کے بینک اکاؤنٹس میں چھپائی گئی اربوں روپے کی رقم کا پتہ لگانے کا دعویٰ کیا تھا۔