اردن نے پاکستان سے گوشت برآمد کرنے کی منظوری دے دی

کراچی: اردن کی وزارت زراعت نے تین پاکستانی مذبح خانوں سے اردن کو گوشت کی برآمد کی منظوری دے دی، یہ بات جمعہ کو ایک بیان میں کہی۔

پاکستان نے گوشت کی برآمدات کے لیے ایک نئی منڈی کھول دی ہے کیونکہ اردن نے پاکستان سے اردن کو گوشت برآمد کرنے کے لیے ٹاٹا بیسٹ فوڈز، کراچی میں دی آرگینک میٹ کمپنی اور لاہور میں تزیج میٹس سمیت تین مذبح خانوں کی منظوری دے دی ہے۔

حالیہ برآمدات کی منظوری ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان اور وزارت نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ لائیو اسٹاک ونگ کی مشترکہ کوششوں سے حاصل ہوئی ہے۔

Here Are 6 Reasons Why You Should Visit Jordan | Travel.Earth
Image Source: TE

اردن اس وقت نیوزی لینڈ، آسٹریلیا، برازیل، رومانیہ، یوکرین، یو اے ای وغیرہ سمیت دنیا کے مختلف حصوں سے گوشت درآمد کر رہا ہے۔ 2001 میں اردن کی گوشت کی درآمد کی مالیت 46 ملین ڈالر تھی جو 2020 میں بڑھ کر 338 ملین ڈالر تک پہنچ گئی، جو کہ 2020 میں سات گنا زیادہ ہے۔

آل پاکستان میٹ ایکسپورٹرز اینڈ پروسیسرز ایسوسی ایشن (اے پی ایم ای پی اے) اور عمان، اردن میں پاکستان کے مشن نے قبل ازیں وزیر زراعت، اردن سے ایک تفصیلی ملاقات کی جس میں اردن میں پاکستان کے سفیر نے انہیں مزید قائل کرنے کے لیے جلد از جلد ایک وفد کو منظم کرنے اور اردن کے گوشت کو کھولنے پر آمادہ کیا۔

نتیجتاً، اردن کے ایک وفد جس میں چھ اراکین (پانچ حکام ایک درآمد کنندہ) پر مشتمل تھا، نے تین پاکستانی مذبح خانوں کا دورہ کیا اور اپنے دورے کے دوران ٹی ڈی اے پی، وزارت تجارت، جانوروں کے قرنطینہ ڈیپارٹمنٹ، ایم این ایف ایس آر کے لائیو سٹاک ونگ، اسلام آباد اوراے پی ایم ای پی اے کے اراکین سے ملاقات کی۔ آیا پاکستانی گوشت کی قیمت اور برآمدی سلسلہ اردن کے ایس پی ایس معیارات پر پورا اترتا ہے۔

Red Meat - Health Benefits, Dangers, What is Red Meat
Image Source: DUK

پاکستانی کمپنیوں کی جانب سے گوشت کی برآمدات کی موجودہ منظوری نے پاکستانی کمپنیوں کے لیے اپنی برآمدی بنیاد کو بڑھانے کا ایک نیا دروازہ کھول دیا۔

Read Previous

حکومت نوجوانوں کو کھیلوں کی سہولیات فراہم کرنے پر توجہ دے رہی ہے: وزیراعظم عمران خان

Read Next

الیکشن کمیشن نے این اے 133 کے ضمنی انتخاب کو شفاف بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کرلیے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *