پاکستان کے نام ور صحافی جو اپنے دبنگ رویے کی وجہ سے عوام میں بہت مقبول ہیں انھوں نے دعویٰ ہے کہ شاہد خاقان عباسی مسلم لیگ نون سے ناراض ہین ان کو گزشتہ 9 ماہ مکمل نظر انداز کیا گیا جس کے بعد انھوں نے مسلم لیگ نون چھوڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے شاہد خاقان کو مسلم لیگ ن کے 15 ایم این ایز کے ساتھ ساتھ طاقت ور حلقوں کی حمایت حاصل ہے ، دوسری طرف سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کھل کر پارٹی تنقید کر رہے ہیں اور گزشتہ روز انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں بتایا کہ وہ جلد مستقبل کے حوالے سے کوئی فیصلہ کریں گے، کیونکہ مسلم لیگ ن آئی ایم ایف کے حوالے سے صحیح فیصلے نہیں کر رہی ۔
نجی ٹی وی چینل کے سینئر صحافی عارف حمید بھٹی کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی مفتاح اسماعیل کو ہٹانے اور گزشتہ 8 ماہ کے دوران خود کو سائیڈ لائن کیے جانے پر نالاں ہیں، سینئر صحافی عارف حمید بھٹی کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے کراچی میں 3 اجلاس کیے ہیں اور وہ نئی جماعت بنانے جا رہے ہیں، مفتاح اسماعیل بھی ان کے ساتھ ہوں گے-وہ شہباز شریف سے بھی نالاں ہیں کیونکہ ان کا جھکاؤ مریم نواز گروپ کی طرف ہے اور نواز شریف دور میں وہ نون لیگ کی حمایت سے وزیراعظم کے عہدے پر بھی رہے –