پرویز الہی کے اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے بعد تحریک انصاف کی طاقت میں کئی گنا اضافہ ہوگیا اور اب ساری گیم ان کی پکڑ میں آگئی ہے -جس کی وجہ سے میاں نواز شریف جو حمزہ کو وزیراعلیٰ بنانے کی کوشش میں تھے اس ناکامی پر ان کو پاکستان مذید غیر محفوظ محسوس ہورہا ہے اور اگر ان حالات میں وہ پاکستان آتے ہیں تو ان کی فوری گرفتاری ہوسکتی ہے جو میاں صاحب کو کسی طور قابل قبول نہیں ہے اسی لیے انھوں نے پاکستان واپسی موخر کرنے کا فیصلہ کرلیا – اور اپنی جماعت کو اس فیصلے سے آگاہ کردیا

 

ذرائع کاکہنا ہے کہ مسلم لیگ(ن) کی سینئر قیادت نے نوازشریف کو رواں ماہ سیاسی صورتحال کے پیش نظر واپسی کی تجویز دی گئی تھی ۔نواز شریف نے پارٹی رہنماﺅں کو جواب دیا کہ فی الحال واپسی ممکن نہیں ،قائد (ن )لیگ نے کہاکہ مریم نواز کی رواں ماہ واپسی کا امکان ہے، مریم نواز کی رپورٹ پر واپسی کا فیصلہ کروں گا۔نوازشریف نے پارٹی رہنماﺅں کو انتخابات کی تیاری کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ پارٹی رہنما بھرپور تیاری کے ساتھ انتخابی میدان میں اتریں۔نواز شریف اسحاق ڈار اور شہباز شریف کے طرز حکومت پر بھی برہم ہیں انہیں یہ احساس ہوگیا ہے کہ انھوں نے الیکشن کی بجائے حکومت میں جانے کا جو فیصلہ کیا تھا اس نے ان کی سیاست کو تباہ کردیا ہے اور اب عام انتخابات میں کامیابی حاصل کرنابہت مشکل ہوگا –