اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے پیر کو وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف نااہلی کی درخواست مسترد کردی۔
تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے قائد حزب اختلاف ڈاکٹر شہزاد وسیم کی مسلم لیگ ن کے رہنما کی نااہلی کی درخواست پر محفوظ کیا گیا فیصلہ سنا دیا۔

Federal Shariat Court declares interest-based banking as against Sharia -  Business & Finance - Business Recorder

Image Source: BR

ای سی پی نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو اہل قرار دیتے ہوئے ای سی پی سے مسلم لیگ (ن) کے رہنما کی سینیٹ کی نشست خالی قرار دینے کی درخواست کو نمٹانے کا حکم دیا۔
اس سے قبل الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی سینیٹ کی نشست حلف نہ اٹھانے پر خالی قرار دینے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔
وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سینیٹ کی نشست پر اسحاق ڈار کی کامیابی کا نوٹیفکیشن 09 مارچ 2018 کو جاری کیا گیا تھا جب کہ اسی سال 29 مارچ کو یہ نوٹیفکیشن معطل کیا گیا تھا۔
وکیل نے کہا کہ سپریم کورٹ سے درخواست خارج ہونے کے بعد اس نوٹیفکیشن کو بحال کر دیا گیا۔ “اس پر حکومتی نوٹیفکیشن لاگو نہیں ہوا تھا۔ کیس کی سماعت کرنے والے ای سی پی پینل کے سامنے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ جب سیٹ پر ان کی کامیابی کا نوٹیفکیشن معطل کر دیا گیا تھا تو وہ حلف کیسے اٹھا سکتے تھے؟
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار 2018 میں پنجاب سے ٹیکنوکریٹ کی نشست پر سینیٹر منتخب ہوئے تھے، وہ لندن میں قیام کے باعث حلف نہیں اٹھا سکے۔ تاہم، سپریم کورٹ نے 8 مئی 2018 کو عدالت میں پیش نہ ہونے پر ان کی رکنیت معطل کر دی تھی۔