چند روز قبل باپ پارٹی کے جام کمال نے کہا تھا کہ باپ پارٹی کے رہنماؤں کو پیپلز پارٹی مینں شامل کرنے کے لیے طاقت ور حلقے اپنازور لگا رہے ہیں اسی بارے میں عمران خان نے بھی کہا تھا کہ ایم کیو ایم اور پاک سر زمین پارٹی کو بھی ملانے میں اسٹیبلشمنٹ کا ہاتھ ہے – آج باپ پارٹی کے اہم رہنماؤں کی پیپلز پاری میں شمولیت سے اس بات کو تقویت ملی کی عمران خان کو سیاست سے آؤٹ کرنے کی بھرپور کوشش جاری ہے –
بلوچستان عوامی پارٹی جسے باپ کے نام سے پہچانا جاتا ہے اور جو اسٹیبلشمنٹ کے سب سے قریب سمجھے جانی والی پارٹی کہلاتی ہے اس کے کئی اہم رہنما باپ کے گھونسلے گھونسلے سےاڑکر پیپلز پارٹی کے گھونسلے میں پہنچ گئے -میڈیا اطلاعات کے مطابق (باپ) کے کئی رہنماؤں نے سابق صدر آصف زرداری سے ملاقات کی اور پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔

 

پی پی اعلامیے کے مطابق آصف زرداری سے اراکین بلوچستان اسمبلی نے ملاقات کی اور ملاقات میں بلوچستان سے تعلق رکھنے والے ظہوربلیدی، سلیم کھوسہ، عارف محمد حسنی، حاجی ملک شاہ گورگیج، اصغررند، میرفائق جمالی، آغا شکیل درانی اور میر ولی محمد سمیت مختلف رہنماؤں نے پیپلز پارٹی میں شمولیت کا بھی اعلان کیا۔