مفتاح اسماعیل مسلم لیگ ن کی جانب سے بے عزت کرکے نکالے جانے پر بہت نار اض ہیں اس لیے وہ مریم سمیت ہرپارٹ رہنما کے خلاف کھل کر گفتگو کررہے ہیںجس سے پارتی کو بہت نقصان پہنچ رہا ہے اس لیے اب اس بات پر غور کای جارہا ہے کہ انہیں پارٹی سے ہی نکالباہر کیا جائے
سینئر صحافی منصورعلی خان جو آج کل صرف لوگوں کے راز افشاں کرنے کے کام پر معمور ہیں آج پھر انھوں نے صحافی سید ثمر عباس کے حوالے سے بتایا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن )کی مرکزی قیادت نے مفتاح اسماعیل کے خلاف انضباطی کارروائی پر غور شروع کر دیا ہے، قیاد کی جانب سے مفتاح اسماعیل کو شو کاز جاری کرنے کا سوچا جارہا ہے اگر وہ اس شوکاز کا جواب نہیں دیں گے تو انہیں پارٹی سے بے دخل کردیا جائے گا –

 

منصور علی خان کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار اور مفتاح اسماعیل کی سرد جنگ اب بھی جاری ہے اور یہ سب اسحاق ڈار کے ایما پر کیا جارہا ہے – ان کا کہنا تھا کہ مفتاح اسماعیل نے جن حالات میں کام کیا اور سٹینڈ لیا وہ ان ہی کا حوصلہ تھا اس وقت تو اسحاق ڈار یہاں تھے بھی نہیں تھے ، اور جس طرح مفتاح اسماعیل کو ہٹایا گیا یہ بہت تکلیف دہ تھا، کہ جس بندے نے آپ کیلئے معاشی طور پر کرو ے گھونٹ پیئے ہوں اس پر پارٹی رہنما ہی کیچڑ اچھالنا شروع کردیں اور اس کو پریس کانفرنس میں رونا پڑ جائے یہ زیادتی ہے ، معاشی صورتحال پر اور اپنی تمام تر ناکامیوں کا ذمہ مفتاح اسماعیل پر ڈال دینا کچھ نا انصافی اور زیادتی ہے ۔ساری پی ڈی ایم اس میں برابر کی قصور وار ہے –