کراچی سے تعلق رکھنے والی سدرہ حمید کراچی کے لوگوں کو کروڑوں کا چونا لگا کر غائب ہوگئی ،اپنا فون بھی سوئچ آف کردیا اس کے قریبی دوستوں کا کہنا ہے کہ سدرہ کو لوگ مارنے کی دھمکیاں دے رہے تھے جس سے ڈر کر اس نے ایسا کیا
کراچی کی خاتون سدرہ حمید سیکڑوں شہریوں سے لاکھوں روپے لے رہی تھی جس کا کوئی تحریری ریکارڈ محفوظ نہیں تھا اور یوں اس نے تمام لوگوں سے 42 کروڑ روپے کا فراڈ کر کے اسکیم ختم کرنے کا اعلان کردیا۔سدرہ حمید نے سوشل میڈیا پر ایک پیغام بھی ڈالا کہ آپ پریشان نہ ہوں میں سب افراد کے پیسے لوٹادوں گی –

 

ایک شخص کا کہنا تھا کہ نجمہ ان لوگوں سے فراڈ کیا جو اسے 15 سال سے جانتے تھے اور نجمہ حمید ان کے 10 سے 15 کروڑ لے کر بھاگ گئی ہے -ایک اور متاثرہ شخص نے کہا کہ گزشتہ چند ماہ سے سدرہ حُمید سوشل میڈیا پر اپنی مہنگی اشیا ء ( گھڑیاں، موبائل فون) کی تصاویر لگا رہی تھیں اور اس سے اندازہ ہورہاتھا کہ یہ رقم کہاں جا رہی تھی، کیونکہ ان کا خاوند ایک فری لانسر ہے اور سدرہ کھانے کی اشیا فروخت کرکے اتنی رقم نہیں بنا سکتی۔اس میں ایک غلطی ا لوگوں کی بھی ہے جو بنا تحریر اتنی بڑی رقم ایک کاتون کے حوالے صرف اس لیے دے رہے تھے کہ انہین ہر ماہ اچھی خاصی رقم ملتی رہے گی اور یہی لالچ ان کا زندگی بھر کی جمع پونجی نگل گیا-