راولپنڈی مین کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچ کے پہلے روز انگلینڈ نے 75 اوورز میں 500 سے زائید رنز بنا ڈالے تھے جو کرکٹ کی تاریخ میں ایک نیا ریکارڈ تھا -انگلینڈ نے 4 وکٹ پر506 رنزبنا کر 112 سالہ ریکارڈ بھی توڑا، اس سے قبل 1910 میں آسٹریلیا نے جنوبی افریقا کے خلاف پہلے دن 494 رنز بنائے تھے۔تاہم چیئرمین پی سی بی رمیز راجہ نے پنڈی سٹیڈیم کی بے جان وکٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ راولپنڈی کی یہ ڈیڈ پچ میرے لیے باعث شرمندگی ہے۔رمیز راجہ نے اعتراف کیا، بدقسمتی سے میں ٹیسٹ میچ کی پچ کے حوالے سے مسئلے کا حل نہیں نکال سکا، ۔انہوں نے کہا یہی وجہ ہے کہ میں پاکستان میں ڈراپ ِان پچز پر زور دے رہا ہوں، ملتان اور کراچی میں بھی اسی طرح کی پچز ملیں گی، جہاں ہمیں اچھا باؤنس نہیں ملتا، مجھے سمجھ نہیں آرہا کہ ہمارے کیوریٹرز کس کے کہنے پر کیسی پچز بنارہے ہیں؟۔

 

 

رمیز کی اس بات پر شاہد آفریدی خود پر قابو نہ رکھ پائے اور بولے کہ میں سن کر حیران رہ گیا کہ رمیز راجہ نے کہا کہ ہم بولرز کے لیے سازگار پچز نہیں بنا سکتے، اتنے عرصے سے پاکستان میں انٹرنیشنل میچز ہو رہے ہیں لیکن ہم ایسی باتیں کررہے ہیں۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ راولپنڈی کی پچ تو ہمیشہ فاسٹ بولرز کے لیے سازگار رہی ہے، پی سی بی نے پچ کے ساتھ چھیڑ چھاڑکیوں کی؟ شائید اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ ہمیں یہ ٹیسٹ ہارنے کا خوف ہے اور ہم جیتنا بھی چاہتے ہیں لیکن ہمیں تکنیک معلوم ہی نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے بہت سے ڈومیسٹک میچز کھیلے ہیں پر پنڈی کی ایسی پچ کبھی نہیں دیکھی۔راولپنڈی کی اس ڈیڈ وکٹ پر 7 کھلاڑی سنچریاں سکور کرچکے ہیں اور 1200 کے قریب رنز بن گئے ہیں اور ابھی 2 اننگز اور 2 ہی روز کا کھیل باقی ہے –