لاہور: خصوصی عدالت (وسطی) لاہور نے وزیر اعظم شہباز شریف اور ان کے اہل خانہ کی منی لانڈرنگ کیس میں 14 ملزمان کے خلاف کیس کی سماعت ملتوی کر دی۔
تفصیلات کے مطابق جج کی عدم حاضری کے باعث عدالت نے سماعت بغیر کسی سماعت کے 7 جنوری تک ملتوی کردی۔

Supreme Court Kicks Off New Term As Hot-Button Issues Await - ABC News

Image Source: ABC News

شریف خاندان کی مبینہ منی لانڈرنگ میں سہولت کاری کے ملزم محمد عثمان اور دیگر 13 ملازمین نے خصوصی عدالت (وسطی) میں بریت کی درخواست دائر کر دی ہے۔
خیال رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور وزیر اعظم شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز کو منی لانڈرنگ کیس میں پہلے ہی بری کیا جا چکا ہے۔
نومبر 2020 میں، ایف آئی اے نے شہباز اور حمزہ کے خلاف 25 روپے کی منی لانڈرنگ کے الزام میں فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) درج کی۔ بعد ازاں جولائی 2021 میں، ملزم نے بینکنگ کورٹ سے عبوری ضمانت حاصل کی۔ بعد ازاں کیس کو خصوصی عدالت سنٹرل I میں منتقل کر دیا گیا۔
مارچ 2022 میں منی لانڈرنگ کیس کی چارج شیٹ جمع کرائی گئی جس میں منی لانڈرنگ کی رقم 25 ارب روپے سے کم کرکے 16 ارب روپے کردی گئی جب کہ 100 گواہوں کے نام متعلقہ عدالت میں پیش کیے گئے۔
منی لانڈرنگ کیس کے تینوں ملزمان سلیمان شہباز، طاہر نقوی اور ملک مقصود عرف مقصود چپراسی کو مفرور قرار دے دیا گیا۔
ملزمان میں حاصل پور کے گلزار احمد اکتوبر 2020 میں اور ملک مقصود جون 2022 میں انتقال کر گئے تھے جب کہ ایف آئی اے لاہور کے سابق ڈائریکٹر اور جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) کے سربراہ ڈاکٹر رضوان بھی رواں سال مئی میں انتقال کر گئے تھے۔