اسلام آباد: وزیر برائے اقتصادی امور سردار ایاز صادق نے جمعہ کو کہا کہ پاکستان کو 11 اپریل سے 30 ستمبر 2022 تک 5665.83 ملین ڈالر کی امداد اور قرضے موصول ہوئے ہیں۔
اس بات کا انکشاف انہوں نے سپیکر راجہ پرویز اشرف کی زیر صدارت قومی اسمبلی کے جاری اجلاس کے دوران کیا۔

Pak rupee losing against regional currencies

Image Source: The News International

ایاز صادق نے کہا کہ موجودہ حکومت کے دور میں پاکستان کو اب تک دنیا سے 5665.83 ملین ڈالر امداد اور قرضے ملے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ قرضوں کی مد میں 5609.9 ڈالر اور امداد کے طور پر 55.92 ملین ڈالر موصول ہوئے۔
قبل ازیں قومی اسمبلی کو دوٹوک الفاظ میں بتایا گیا تھا کہ ملک کو ڈیفالٹ کا کوئی خطرہ نہیں ہے۔
وزیر مملکت برائے خزانہ عائشہ غوث پاشا نے وقفہ سوالات کے دوران ایوان کو بتایا کہ موجودہ مخلوط حکومت کے برسراقتدار آنے پر ملک کو مشکل صورتحال کا سامنا تھا کیونکہ آئی ایم ایف پروگرام معطل تھا۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے آئی ایم ایف پروگرام کو بحال کیا ہے جبکہ برآمدات میں بہتری دیکھی جا رہی ہے اور ملک میں ترسیلات زر بھی بڑھ رہی ہیں۔
وزیر مملکت نے مزید کہا کہ ہماری اصلاحات کے نتیجے میں سرمایہ کار ملک میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہر کر رہے ہیں۔