کراچی: سندھ حکومت نے کفایت شعاری کے اقدامات کا اعلان کیا ہے، جس میں ہائی ٹی پر پابندی، سرکاری ملازمین کے یوٹیلیٹی کوٹہ میں کمی، ہر قسم کی گاڑیوں کی خریداری پر پابندی اور نئی آسامیاں پیدا کرنا شامل ہیں۔
نوٹیفکیشن کے مطابق حکومت نے سرکاری دفاتر اور اس کے متعلقہ محکموں اور خود مختار اداروں میں لنچ، ڈنر اور ہائی ٹی پر پابندی عائد کر دی ہے۔

Death toll from floods in Pakistan reaches 1,138

Image Source: AA

مزید برآں، سرکاری سطح پر اور دفاتر میں یوٹیلیٹیز کی کھپت میں 10 فیصد کمی کی جائے گی جبکہ دفتری آلات اور سامان کی خریداری پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔
صوبائی حکومت نے اپنے ملازمین سے کہا ہے کہ وہ غیر ضروری ملاقاتوں کے لیے سفر کو محدود کریں اور سرکاری دفاتر میں زوم میٹنگز کو فروغ دیں۔
ڈبلیو ایچ او کے مطابق ملک کے 84 اضلاع سیلاب سے متاثر ہوئے ہیں۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے پاکستان کے نمائندے نے کہا تھا کہ سیلاب سے 2000 سے زائد صحت کی سہولیات کو نقصان پہنچا ہے۔
پاکستان میں غیر معمولی سیلاب سے تقریباً 33 ملین افراد متاثر ہوئے ہیں۔ سیلاب سے 17 لاکھ مکانات کو نقصان پہنچا ہے اور تمام تباہ شدہ مکانات کی تعمیر پر 160 ارب روپے لاگت آئے گی، ان میں سے ورلڈ بینک نے 110 ارب روپے دینے کا وعدہ کیا ہے، باقی رقم کا انتظام صوبائی حکومت وفاقی حکومت سے کر رہی ہے۔ ذرائع اور عطیہ دہندگان کے ذریعے۔