مدینہ منورہ کی اپیل کورٹ کے جج کو لاکھوں ریال رشوت لیتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا-اس خبر نے دنیا بھر کے مسلمانوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے کیونکہ سعودی عرب میں کرپشن کی روک تھام کے لیے بہت سخت قوانین بنائے گئے ہیں اس لیے کوئی تصور ہی نہیں کرسکتا کہ وہاں کی عدالت کا کوئی جج اس طرح کی حماقت کی جرات کرسکتاہے –

 

سعودی حکام کے مطابق رشوت لینے میں ملوث جج نے مقدمے میں حق میں فیصلہ سنانے کیلئے 5لاکھ ریال میں اپنے ضمیر کا سودا کیا مگر اس کی یہ چوری پکڑی گئی جج صاحب کو گرفتار کرلیا گیا ، گرفتار جج کے خلاف قانونی کارروائی مکمل کرلی گئی ہے۔سعودی میڈیا کے مطابق گرفتار جج کو 4سے 5 سال قید اور 50 ہزار ریال تک جرمانہ ہو سکتا ہے۔