چنیوٹ: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کا چھٹا دن آج چنیوٹ سے پی ٹی آئی رہنما اسد عمر کی قیادت میں شروع ہوگا۔
پی ٹی آئی کے مارچ کی پہلی منزل دن 12 بجے چنیوٹ میں بھٹو کالونی ہوگی۔
پی ٹی آئی کے سربراہ شام 4:30 بجے ویڈیو لنک کے ذریعے مارچ کے شرکاء سے خطاب کریں گے۔

Huge number of people to attend PTI March 27 public meeting: Amir Mughal -  Daily Times

Image Source: Daily Times

امریکہ کے ساتھ تعلقات اور سائفر کے معاملے کے حوالے سے ایک بین الاقوامی اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے پیر کو کہا کہ پروپیگنڈا سیل نے ان کا بیان غلط انداز میں پیش کیا۔
ایک تقریر میں عمران خان نے کہا کہ جن دو صحافیوں کو انہوں نے انٹرویو دیا تھا، انہیں بھی وضاحت دینا ہوگی۔ واضح طور پر پاکستان مسلم لیگ (ن) (پی ایم ایل-این) کے سوشل میڈیا ونگ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ پروپیگنڈا سیل نے چیری پِک بیانات کو صحافیوں کو دیا۔
سابق وزیراعظم نے کہا کہ چین، روس اور امریکا سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ کسی کی غلامی قبول نہیں کریں گے۔ مسئلہ کشمیر حل ہونے کی صورت میں ہم بھارت سے بھی دوستی کرنے کو تیار ہیں۔ میں نے بھارت کے ساتھ بھی دوستی کرنے کی کوشش کی۔
سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے سربراہ نواز شریف کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جس کو پاکستان سے کوئی دلچسپی نہیں وہ کیسے اہم فیصلے کر رہے ہیں۔ ’’ہمیں کسی مفرور کو اہم معاملات پر فیصلے کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔ کیا پاکستان کا پیسہ چوری کرنے والا پاکستان کے مستقبل کا فیصلہ کرے گا؟ کیا مفرور فیصلہ کریں گے کہ انتخابات کب کرائے جائیں؟ انہوں نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے پوچھا کہ وزیر اعظم شہباز کیسے ایک اہم عہدے پر تقرری کے لیے مفرور ہو سکتے ہیں۔
اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) آج منڈی بہاؤالدین سے مارچ کے پانچویں روز کا آغاز کرنے کے لیے تیار ہے۔
پی ٹی آئی رہنماؤں کی جانب سے سامنے آنے والی تفصیلات میں کہا گیا ہے کہ عمران خان آج شام 4:30 بجے شرکاء سے خطاب کریں گے۔
سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین نے کہا ہے کہ ان کا مارچ موجودہ حکومت کے گزشتہ مارچوں سے مختلف ہے کیونکہ یہ کسی این آر او کے حصول کے لیے نہیں بلکہ یہ ملک اور اس کے عوام کی حقیقی آزادی کے لیے ہے۔
انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ تمام مسائل کا حل منصفانہ اور آزادانہ انتخابات کے انعقاد میں مضمر ہے۔