پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اسد عمر نے اعلان کیا کہ ہفتہ (آج) شام 5 بجے مسلسل دوسرے دن ملک گیر احتجاج کیا جائے گا۔
اسد عمر نے ٹویٹر پر کہا کہ پی ٹی آئی کی مقامی تنظیمیں اپنے اپنے شہروں میں احتجاج کے مقام کا اعلان کریں گی جب کہ وہ لاہور کے لبرٹی چوک میں ہونے والے مظاہرے میں شرکت کریں گے۔
یہ اعلان عمران خان کے قوم سے خطاب اور حکومت مخالف تحریک کو ختم کرنے کے چند گھنٹے بعد سامنے آیا ہے جس کا آغاز انہوں نے 28 اکتوبر کو لاہور سے کیا تھا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی قیادت نے جمعہ کے روز اپنے اہم اجلاس میں اس وقت تک جارحانہ حکمت عملی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا جب تک ان کے اور دیگر کے نام تین افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے مطالبات پورے نہیں ہوتے۔
پارٹی قیادت نے انسپکٹر جنرل (آئی جی) کے تبادلے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق چیئرمین عمران خان کی زیرصدارت پی ٹی آئی قیادت کا اجلاس ہوا جس میں مطالبات تسلیم نہ ہونے تک ملک گیر احتجاج کی جارحانہ حکمت عملی جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔
سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے گزشتہ روز لانگ مارچ کے دوران بندوق کے حملے میں زخمی ہونے کے بعد شوکت خانم ہسپتال لاہور میں پی ٹی آئی کارکنوں سے اپنا پہلا خطاب کیا۔
اپنے ابتدائی ریمارکس میں عمران خان نے کہا کہ وزیرآباد میں پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے دوران بندوق کے حملے میں انہیں چار گولیاں لگیں، ڈاکٹر فیصل سلطان ان کے زخمی ہونے کے بارے میں بریفنگ دیں گے۔

Imran says will return to the streets after he recovers - Pakistan - SAMAA

Image Source: Samaa English

ڈاکٹر فیصل سلطان نے عمران خان کے ایکسرے کا انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ گولیوں سے عمران خان کی دائیں ٹانگ کی ہڈی بھی ٹوٹ گئی۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی دائیں ٹانگ میں ایک شریان کے قریب گولی لگی، شریان خراب ہونے کی صورت میں خون کے بہاؤ کو کنٹرول کرنا مشکل ہو گا۔
سابق وزیر اعظم نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پی ٹی آئی حکومت کے دوران ایک امریکی انڈر سیکرٹری نے پاکستانی سفیر کو دھمکی دی تھی کہ وہ انہیں ان کے عہدے سے ہٹا دیں، بصورت دیگر ملک کو سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ تحریک عدم اعتماد کو کامیاب کرانے کے لیے قانون سازوں کے ضمیروں کو نیلام کیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سب سے بڑی سیاسی جماعت کے سربراہ کو قتل کرنے کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ سندھ کے عوام کو زرداری مافیا سے نجات دلانے کے لیے لڑیں گے۔