سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران نے اعلان کیا ہے کہ وہ ملک کو درآمد شدہ حکومت اور کرپٹ حکمرانوں سے نجات دلانے کے لیے ہفتہ سے اپنی حقیقی آزادی کی تحریک شروع کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اس وقت تک ترقی نہیں کر سکتا جب تک یہاں انصاف کا نظام قائم نہیں ہوتا۔

عمران نے کہا کہ ملک موجودہ بحران سے اس وقت تک نہیں نکل سکتا جب تک قانون کی حکمرانی قائم نہیں ہوتی، ملک کو ترقی اور خوشحالی کے لیے قانون کی بالادستی کی ضرورت ہے۔

قانون کی حکمرانی قائم ہونے تک ملک ترقی کی راہ پر نہیں ڈال سکتا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو سپریم کورٹ PTI files plea in SC to obtain permission for another long march to  Islamabadلاہور رجسٹری میں انصاف لائرز فورم کے زیر اہتمام آل پاکستان لائرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے وکلاء برادری پر زور دیا کہ جب وہ کال دیں تو ان کی حقیقی تحریک آزادی میں ان کا ساتھ دیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں جنگل اور ظلم کا راج ہے، اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ ملک کو موجودہ دلدل سے نکالیں گے۔
انہوں نے کہا کہ ملک کی معیشت نیچے کی طرف جا رہی ہے جبکہ مہنگائی اوپر کی طرف جا رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ روپے کی قدر میں 33 فیصد کمی ہوئی ہے اور ملک اور اہل وطن غریب سے غریب تر ہوتے جا رہے ہیں جبکہ حکمران امیر سے امیر تر ہوتے جا رہے ہیں کیونکہ ان کا سارا مال ڈالروں میں ہے اور ان کے کاروبار اور اثاثے بیرون ممالک میں ہیں۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ روپے کی قدر میں کمی سے حکمرانوں کے پیسے میں 33 فیصد اضافہ ہوا ہے۔
انہوں نے قوم پر زور دیا کہ وہ ان لوگوں کو ووٹ نہ دیں جن کے بیرون ریاستوں میں اثاثے، کاروبار اور بچے ہوں۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت نے ملک کو بحران کی دلدل میں دھکیل دیا ہے اور ملک اور عوام اپنی کرپشن اور نااہلی کی وجہ سے سنگین مسائل سے دوچار ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ کسان کرپٹ حکومت کی ظالمانہ پالیسیوں کے خلاف اسلام آباد میں احتجاج کر رہے ہیں۔

انہوں نے مشاہدہ کیا کہ قانون نافذ کرنے والے خود قانون کی خلاف ورزی کر رہے ہیں، 25 مئی کو پی ٹی آئی رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف پولیس کی زیادتیوں کو یاد کیا۔

عمران خان نے کہا کہ شہباز شریف کی 60 فیصد کابینہ ضمانت پر ہے اور انہیں عدالتوں میں کرپشن کے مقدمات کا سامنا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حکمران الیکشن سے بھاگ رہے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ وہ پی ٹی آئی کو الیکشن میں ہرا نہیں سکتے۔