ملالہ یوسفزئی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں لڑکیوں کی تعلیم کی ضرورت کو اجاگر کرنے کے خطاب کیا ۔ سب سے کم عمر نوبل انعام یافتہ لڑکی ملالہ نے انسٹاگرام پر اپنی تقریر بھی شیئر کی۔انہوں نے بالی ووڈ اداکار پریانکا چوپڑا سمیت متعدد کارکنوں سے بھی ملاقات کی۔ جس کی ملالہ نےکچھ تصاویر اپنے انسٹاگرام فیڈ پر شیئر کیں۔ تاہم ان کو پاکستان میں ہرگز پزیرائی نہ مل سکئی بلکہ ان کو ہدف تنقید ہی بنا یا گیا اس کے بعد مشہور ٹی وی میزبان متھیرا نے انسٹاگرام پر ملالہ کے بارے میں اپنے کچھ خیالات شیئر کیے۔

 

 

پاکستان کی اداکارہ جو خود لوگوں کی تنقید کا باعث بنتی ہیں انھوں نے ملالہ یوسفزئی پر کھل کر تنقید کردی متھیرا نے اپنی انسٹاگرام اسٹوری پر ملالہ اور پریانکا کی ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ’ملالہ کو صرف بین الاقوامی فنکاروں کے ساتھ تصویریں کھینچنے اور پاکستان کے بارے میں بات کرنے کا معاوضہ ملتا ہے جب وہ پاکستان میں بھی نہیں رہتی ہیں۔ وہ اس وقت پاکستان کا دورہ بھی نہیں کر پائی تھی جب آدھا پاکستان ڈوب رہا تھا ۔ متھیرا نے آخر میں لکھا “عجیب بات ہے، یہ لڑکی کتنی منافق ہے۔

 

 

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنی تقریر کرتے ہوئے ملالہ نے انسٹاگرام پر لکھا اور شیئر کیا کہ “سات سال پہلے میں اس پلیٹ فارم پر اس امید پر کھڑی تھی کہ ایک نوعمر لڑکی کی آواز سنی جائے گی جس نے اپنی تعلیم کے لیے کھڑے ہونے پر گولی کھائی تھی۔”
ملالہ یوسفزئی کا مزید کہنا تھا کہ “اس دن، لیڈرز، کارپوریشنز، سول سوسائٹی – ہم سب نے – 2030 تک ہر بچے کو اسکول میں دیکھنے کے لیے مل کر کام کرنے کا عہد کیا۔ پھر بھی اس ہدف کی تاریخ کے آدھے راستے پر، ہمیں تعلیمی ایمرجنسی کا سامنا ہے۔”
ملالہ نے اس کے ساتھ اختتام کیا، “مجھے امید ہے، مزید سات سالوں میں، ہم آپ سے دوبارہ بات کریں گے۔ لیکن آپ سے ہماری مدد کرنے کے لیے زور دینے کے بجائے، ہم آپ کی لڑکیوں کے لیے جو ترقی کی ہے اس کا جشن منائیں گے۔”