مریم نواز اور عمران خان میں لفظوں جملوں کی گولہ باری کا سلسلہ جاری ہے اور دونوں ایک دوسرے کو بے عزت کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے اس جنگ کا آغاز مریم نواز نے شروع کیا تھا پہلے تو عمران خان نے مریم نواز کے الزامات پر خاموشی اختیا رکیے رکھی اور صرف نواز اور شہباز کو ہی ہدف تنقید بناتے رہے ہیں مگر اب وہ مریم نواز کو کسی طور بھی معاف کرنے پر تیار نہیں اور ان کے جلسے میں آئے شرکاء بھی ایسے ہی جملے سننے کے لیےہمہ وقت تیار رہتے ہیں

 

ٹوئٹر پر جاری پیغام میں مریم نواز کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے مخالفین نے ان کے خلاف ظلم و انتقام کی ہر حد پار کرلی، عمران خان اور ان کی جماعت نے انھیں مٹانے کے لیے کوئی کسر نہیں چھوڑی،مگر اللہ کی قدرت دیکھین کہ مخالفین کی اس سے بڑی سزا کیا ہوگی کہ وہ نواز شریف کو پھر ملکی سیاسی نقشہ ترتیب دیتے دیکھ رہے ہیں -ان کا اشارہ نئے آرمی چیف کی تعیناتی کے حوالے سے تھا کیونکہ شہباز شریف نے نواز شریف سے اس سلسلے میں ساڑھے 3 گھنٹے طویل ملاقات کی ۔سابق وزیر اعظم عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ فتنہ خان کی وزیر اعظم شہباز شریف کے بارے میں بے تکی باتیں پتہ دے رہی ہیں کہ شہباز شریف اور پاکستان کو بیرونی دنیا سے جو سفارتی کامیابیاں ملی ہیں اس نے فارن فنڈڈ ایجنٹ کو تڑپا کر رکھ دیا ہے۔مرکزی نائب صدر ن لیگ نے مزید لکھا کہ بیرونی دنیا سے لیے گئے ڈالر آخر حلال بھی تو کرنے ہیں -اس لیے اسی حسد کی آگ میں جلتے رہنا اب اس فتنہ خان کا مقدر ہے۔