نوشہرہ: مقامی انتظامیہ نے دریائے کابل میں پانی کی سطح میں کمی کے بعد کے پی کے نوشہرہ میں ریلیف کیمپ بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق فلڈ سیل نے کہا ہے کہ نوشہرہ کے مقام پر دریائے کابل میں پانی کی سطح میں مزید کمی ریکارڈ کی گئی ہے، ملک کے تمام دریاؤں میں پانی کا بہاؤ اس وقت معمول پر ہے۔

نوشہرہ کے مقام پر دریائے کابل میں پانی کا موجودہ بہاؤ 79600 کیوسک ہے جب کہ ضلعی انتظامیہ نے کہا ہے کہ پانی کا بہاؤ اب معمول پر ہے اور نوشہرہ میں ریلیف کیمپ بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ متاثرین کو اپنے گھروں کو جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ڈپٹی کمشنر نوشہرہ نے کہا کہ متاثرہ علاقوں کے لوگ اپنے گھروں کو جائیں تاکہ صفائی کا کام شروع کیا جا سکے اور نقصانات کا ڈیٹا اکٹھا کیا جا سکے۔

دوسری جانب دریائے سندھ میں سکھر، گڈو اور تونسہ بیراج پر پانچ لاکھ کیوسک سے زائد پانی کے ساتھ اونچے درجے کا سیلاب ہے، کچے کے علاقے سے لوگ محفوظ مقامات پر منتقل ہو رہے ہیں۔

سیلابی پانی خوفناک سیلاب میں حفاظتی بندوں اور پشتوں کو دبا رہا ہے۔

دریائے سندھ میں تونسہ بیراج کے مقام پر اونچے درجے کا سیلاب ہے جس میں پانی کی آمد اور اخراج 5 لاکھ 80 ہزار کیوسک ریکارڈ کیا گیا۔ گڈو بیراج پر بھی دریا میں اونچے درجے کا سیلاب ہے جس میں پانی کی آمد اور اخراج 5 لاکھ 31 ہزار 408 کیوسک ریکارڈ کیا گیا۔ سکھر بیراج پر پانی کی آمد و اخراج 5 لاکھ 29 ہزار 817 کیوسک ریکارڈ کی گئی۔