دنیا بھر میں تو حکومتی جلاد یا اہلکار مجرم کو پھانسی دیتے ہیں مگر ایران میں معاملہ مختلف ہے یہاں شرعئی احکامات کا اطلاق ہوتا ہے جس کے مطابق قاتل کو تختہ دار پر لٹکا کر مقتول کے ورثاء سے لٹکانے کا عمل کروایا جاتا ہے مگر آج ایک حیران کن خبر اس سلسلے میں سننے کو ملی کی بیٹی نے اپنے والد کو قاتلوں کو جو اس لڑکی کی ماں اور نانا تھااپنے ہاتھوں سے پھانسی دیمریم کریمی کا ابراہیم نامی شوہر مبینہ طور پر اسے سالہا سال سے گھریلو تشدد کا نشانہ بنا رہا تھا۔ مریم اس سے طلاق مانگتی تھی مگر وہ اس سے انکاری رہا۔ جس پر بالآخر تنگ آ کر مریم نے اسے قتل کر دیا۔ عدالت کی طرف سے شوہر کو قتل کرنے کے جرم میں اسے سزائے موت سنائی گئی تھی جس پر عملدرآمد مقتول کی وارث ہونے کی وجہ سے مریم کی بیٹی کے ہاتھوں  کروایا گیا۔

 

 

آپ سب جانتے ہیں کہ سعودی عرب کی طرح ایران میں بھی شرعی احکامات کے مطابق مجرمان کو سزا دی جاتی ہے اس لیے عدالت نے معاملہ پھانسی کی سزا پانے والی خاتون مریم کی بیٹی کے ہاتھ میں معاملہ دے دیا کہ وہ اپنی ماں کو سزا دلوانا چاہتی ہے یا نہیں جس پر مریم کی بیٹی نے اپنی ماں اور نانا کو معافی دینے سے انکار کیا جس کے بعد ایرانی شعئی عدالت کے ھکم کے مطابق خاتون اور اور اس کے والد کو کرسی پر کھڑا کرکے گلے میں پھندا ڈال دیا گیا اور اس بیٹی کو کہا گیا کہ ان مجرمان سے اپنے کون کا بدلہ لینے کے لیے کرسی کو دھکا دے کر ہٹا دے جس پر لڑکی نے پہلے اپنی والدہ اور پھر اپنے نانا کو پھانسی دے دی