پاکستان نے مشرقی افغانستان کے سیلاب سے متاثرہ افراد کے لیے خصوصی پرواز کے ذریعے انسانی امداد اور امدادی سامان روانہ کر دیا ہے۔

جمعہ کو اسلام آباد کے نور خان ایئربیس پر افغانستان کو امدادی سامان کی ترسیل کے سلسلے میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ امدادی امداد میں خیمے، کمبل، کپڑوں کا سامان، کھانے کا تیل اور چینی شامل ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان افغان عوام کے دکھ میں برابر کا شریک ہے اور مشکل کی اس گھڑی میں ان کے ساتھ کھڑا ہے۔

Afghanistan: Deadly flash floods destroy homes and lives - BBC News
Image Source: BBC

انہوں نے کہا کہ ہماری امدادی کوششیں دونوں ممالک کے درمیان موجود برادرانہ رشتوں کا عاجزانہ ثبوت ہیں۔

وزیر خارجہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ افغان عوام کی مدد کے لیے اپنی امدادی سرگرمیاں تیز کرے جو ایک کے بعد ایک آفت کا سامنا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری مشکل کی اس گھڑی میں افغانستان کے لوگوں کو نہیں چھوڑ سکتی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہر سطح پر اس بات کی وکالت کرتا رہا ہے کہ بین الاقوامی برادری کو افغانستان کے ساتھ اس کے اقتصادی بحران سے بچنے کے لیے تعاون کرنا چاہیے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان ایک پرامن، مستحکم، خوشحال اور منسلک افغانستان کا خواہاں ہے۔