اسلام آباد: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے جمعرات کو کہا کہ پی ٹی آئی کی قیادت میں حکومت کے دوران معیشت نے ترقی کی۔

وہ آج اسلام آباد بار میں ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے اور کہا کہ پٹرول کی قیمتوں میں اضافے سے غریب اور متوسط ​​طبقے خصوصاً تنخواہ دار افراد بری طرح متاثر ہوں گے۔

اپنے دورہ روس کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وفد تیل کی خاطر روس گیا اور اس بات پر زور دیا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ پاکستان کے تمام ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات ہونے چاہئیں۔

PM Imran Khan is pleased over economic growth
Image Source: GVS

عمران خان نے یہ بھی کہا کہ پاکستان واحد ملک نہیں ہے جہاں امریکہ کے اثر و رسوخ سے حکومت بدلی، قوم کو ریاست کی خودمختاری کے خلاف کھڑا ہونا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’خارجہ پالیسی دوسرے ممالک کے بجائے قوم کو فائدہ پہنچانا ہے اور میں ہندوستان کی خارجہ پالیسی کی تعریف کرتا ہوں کیونکہ وہ کبھی بھی دوسروں سے ڈکٹیشن نہیں لیتے‘‘۔

پی ٹی آئی کے سربراہ نے قوم پر زور دیا کہ وہ “امپورٹڈ حکومت” کو مسترد کر دے اور کہا کہ اگر قوم موجودہ حکومت کی حمایت کرتی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ اس نے غیر ملکی مداخلت کو قبول کر لیا ہے۔

دنیا میں توانائی کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں اور ایسے حالات میں عدم استحکام کی ہمت نہیں کی جا سکتی۔

انہوں نے مزید الزام لگایا کہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت میں حکومت کے پاس ملک کو چلانے کے لیے کوئی روڈ میپ نہیں ہے اور ان کا مقصد صرف این آر او لینا ہے۔ عمران خان نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت کے خلاف مقدمات کے چار ملزمان پراسرار طور پر مر چکے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں قانون کی حکمرانی اب قبروں میں ہے۔